Sindh reports 38 deaths from coronavirus in the last 24 hours

Sindh-reports-38-deaths-from-coronavirus-in-last-24-hours.jpg

جمعرات کو جمعرات کو محکمہ صحت سندھ نے بتایا کہ سندھ میں گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران کم سے کم 38 افراد کورون وائرس سے ہلاک ہوگئے۔

محکمہ صحت نے بتایا کہ ان میں سے 30 افراد کی موت صرف کراچی میں ہوئی۔

روزنامہ کی رپورٹ کے مطابق ، سندھ میں گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران کورونا وائرس کے 3،038 نئے کیسز ریکارڈ ہوئے۔ کراچی میں ان میں سے 2،471 اطلاعات ہیں۔

اس وائرس سے اب تک 776 افراد ہلاک ہوچکے ہیں ، جب کہ صوبے میں سرگرم فعال مقدمات کی تعداد 24،005 ہے۔

محکمہ صحت نے بتایا کہ پچھلے 24 گھنٹوں کے دوران کم از کم 1،040 افراد وائرس سے بازیاب ہوئے ہیں۔ صوبے میں وائرس سے بازیاب ہونے والے مریضوں کی کل تعداد 22،074 ہوگئی ہے۔

حکومت نے عید سے قبل لاک ڈاؤن کو ختم کرنے کے بعد ملک میں انفیکشن کی تعداد میں تیزی سے اضافہ دیکھا۔

7 جون کو پنجاب کے وزیر صحت کو لکھے گئے ایک خط میں ، عالمی ادارہ صحت نے کہا ہے کہ حکومت نے لاک ڈاؤن کو مکمل طور پر نرم کرنے کے بعد ، روزانہ نئے کیسوں کی تعداد 25 فیصد مثبت شرح کے ساتھ 4،000 کے قریب ہوگئی۔

اس نے پاکستان سے ہدف والے علاقوں میں “وقفے وقفے سے لاک ڈاؤن” لگانے کو کہا کیونکہ اس نے کہا تھا کہ پابندیوں میں نرمی سے قبل ملک “شرطی شرائط” کو پورا نہیں کرتا ہے۔

کراچی میں ڈاکٹروں نے حکومت سے ڈبلیو ایچ او کی سفارش پر عمل کرنے اور ملک میں لاک ڈاؤن دوبارہ نافذ کرنے کی بھی اپیل کی ہے۔

پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن کے ڈاکٹر میرزا علی اظہر نے 10 جون کو ایک پریس کانفرنس میں کہا تھا کہ “ہم لاک ڈاؤن نافذ کرنے اور پورے ملک کو بند کرکے اور معاملات کو کم کرکے محفوظ رہ سکتے تھے۔” لیکن ہم سونے کا یہ وقت گنوا چکے ہیں۔ “

ڈاکٹر نے کہا کہ ڈبلیو ایچ او نے پاکستان میں لاک ڈاؤن کی سفارش کی ہے لیکن ہم نے “الٹ” سمت لی۔

تاہم ، پاکستان کے اعلی صحت کے عہدیدار نے پہلے ہی ڈبلیو ایچ او کی سفارش پر پورے ملک میں دو ہفتے کا لاک ڈاؤن مسلط کرنے کے کسی امکان کو مسترد کردیا ہے۔

وزیر اعظم کے معاون ، ڈاکٹر ظفر مرزا نے بدھ کے روز سماء ٹی وی کو بتایا ، “ڈبلیو ایچ او صرف صحت سے متعلق عوامل کو ہی مدنظر رکھتا ہے جب کہ حکومتوں کو عوام کی روزی کے بارے میں بھی سوچنا پڑتا ہے۔”

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

scroll to top